Abdul Hakim, 58180, Punjab, PK

Ghar Jab Bana Liya Tere Dar Par Kahe Baghair – Mirza Ghalib

Har Taan Hai Deepuck!

Ghar Jab Bana Liya Tere Dar Par Kahe Baghair – Mirza Ghalib

گھر جب بنا لیا ترے در پر کہے بغیر – مرزا اسد اللہ خاں غالبؔ
مرزا غالبؔ کی اردو غزل کی بلند خوانی۔
آواز: راحیلؔ فاروق
پیشکش: دیپک میڈیا

دیپک میڈیا اردو شاعری اور بالخصوص اردو غزلیات کو آڈیو (صوتی) شکل میں پیش کر کے اردو ادب کی خدمت کر رہا ہے۔ تقریباٰ تمام اہم سماجی واسطوں پر بالکل مفت دستیاب آڈیو شاعری کے ان شہکاروں کی نسبت آپ کی آرا اور تبصروں کو خوش آمدید کہا جائے گا۔

Ghar Jab Bana Liya Tere Dar Par Kahe Baghair (Audio)
Mirza Asad Ullah Khan Ghalib
Urdu Ghazal of Mirza Asadullah Khan Ghalib
Oral Interpretation: Raheel Farooq
Production: Deepuck Media

Deepuck Media produces Urdu poetry audios with a vision to promote the legendary tradition of Urdu literature. Classic recordings, full audios, absolutely free!

غزل:

گھر جب بنا لیا ترے در پر کہے بغیر
جانے گا اب بھی تو نہ مرا گھر کہے بغیر

کہتے ہیں جب رہی نہ مجھے طاقتِ سخن
جانوں کسی کے دل کی میں کیونکر کہے بغیر

کام اس سے آ پڑا ہے کہ جس کا جہان میں
لیوے نہ کوئی نام ستم گر کہے بغیر

جی میں ہی کچھ نہیں ہے ہمارے وگرنہ ہم
سر جائے یا رہے نہ رہیں پر کہے بغیر

چھوڑوں گا میں نہ اس بت کافر کا پوجنا
چھوڑے نہ خلق گو مجھے کافر کہے بغیر

مقصد ہے ناز و غمزہ ولے گفتگو میں کام
چلتا نہیں ہے دشنہ و خنجر کہے بغیر

ہرچند ہو مشاہدۂ حق کی گفتگو
بنتی نہیں ہے بادہ و ساغر کہے بغیر

بہرا ہوں میں تو چاہیے دونا ہو التفات
سنتا نہیں ہوں بات مکرر کہے بغیر

غالبؔ نہ کر حضور میں تو بار بار عرض
ظاہر ہے تیرا حال سب ان پر کہے بغیر

 

%d bloggers like this: